2017 November 24
روہنگیا میں بچے یا زندہ جلائے جاتے ہیں یا ذبح کیئے جاتے ہیں
مندرجات: ٩٨٩ تاریخ اشاعت: ٠٥ September ٢٠١٧ - ١٢:٢٧ مشاہدات: 58
خبریں » پبلک
روہنگیا میں بچے یا زندہ جلائے جاتے ہیں یا ذبح کیئے جاتے ہیں

انڈپینڈنٹ نیوز نے لکھا ہے کہ: عینی شاہدین کے مطابق روہینگیا میں فوجیوں کے ہاتھوں کئی بچوں کے سر کاٹے گئے اور انہیں زندہ جلا دیا گیا ہے۔

41 سالہ عبدالرحمن نے کہا ہے کہ: «چوت پیین» گاؤں میں کچھ افراد کو لکڑی کے پنجرے میں بند کر کے اسے آگ لگا دی گئی، جن میں میرا بھائی بھی شامل تھا۔

انہوں نے مزید بتایا ہے کہ: اپنے گھر کے دوسرے افراد کو زمین پر پڑے دیکھا جن میں سے کچھ کو گولی ماری گئی تھی اور دو بھتیجوں کے سر قلم کیے ہوئے تھے۔

27 سالہ سلطان احمد نے کہا ہے کہ: میں نے کچھ جسموں کو بغیر سر کے دیکھا، ہم اپنے گھر میں چھپے ہوئے تھے، اور مسلحہ افراد کے جانے کے بعد فرار ہوگئے۔

دوسرے دیہاتوں سے بھی جو لوگ زندہ بچے تھے، انہوں نے بھی بغیر سر کی لاشیں دیکھی ہیں۔

انسانی حقوق کے ادارے کی جانب سے سیٹالائٹ کی تصویریں دیکھائی گئی ہیں، جن میں دیکھایا گیا ہے کہ 700 گھروں کو آگ لگا دی گئی تھی۔

واضح رہے کہ ان مظالم کی وجہ سے ایک ہفتے کے دوران 60 افراد روہینگیا سے بنگلادیش پناہ گزیں ہوگئے ہیں۔

موجودہ حالت یہ ہے کہ بنگلادیش نے اپنے بارڈر بند کر دیے ہیں، اور کہا ہے کہ ان کا ملک اتنے مہاجرین کو پناہ نہیں دے سکتا ہے۔





Share
* نام:
* ایمیل:
* رائے کا متن :
* سیکورٹی کوڈ:
  

آخری مندرجات
زیادہ زیر بحث والی
زیادہ مشاہدات والی