2017 September 22
راجہ بازار دہشت گردی: اصل چہرے بے نقاب
مندرجات: ٩٦٦ تاریخ اشاعت: ٢٦ August ٢٠١٧ - ١١:٤٦ مشاہدات: 26
خبریں » پبلک
راجہ بازار دہشت گردی: اصل چہرے بے نقاب

ڈی جی آئی ایس پی آر نے اپنی حالیہ رپورٹ میں‌کہا ہے کہ 2013 میں راولپنڈی میں سنی مسجد پرحملہ کیا گیا تھا جس کی ذمہ داری شیعہ تنظیم نے قبول کی تھالیکن آئی ایس آئی نے اس پر بہت کام کیا اور نیٹ ورک کو بے نقاب کیا اوردہشت گرد کو گرفتار کیا اور یہ دہشت گرد بھی اسی مسلک سے تعلق رکھتے تھے جس مسلک کی یہ مسجد تھی۔


ڈی ڈجی آئی ایس پی آر نے گرفتار دہشت گرد کی ویڈیو بھی دکھائی جس میں وہ اعتراف کررہا ہے کہ انھوں نے محرم کے دوران کالے کپڑے پہن کر وہاں پر کارروائی کریں۔

انھوں نے کہا کہ ‘فرقہ وارانہ فسادات کروانے کی کوشش کی گئی جس کا رابطہ این ڈی ایس را اور کلبھوشن یادیو کے نیٹ ورک سے ملتا ہے’۔ان کا کہنا تھا کہ ‘شیعہ سنی فساد وہاں سے شروع نہیں ہوا جہاں سے یہ پاکستان کے بدخوا اور دشمن شروع کرنا چاہتے تھے’۔

ترجمان پاک فوج نے کہا کہ راولپنڈی میں مسجد پر حملے کا نیٹ ورک پکڑا گیا، گرفتاردہشت گردوں کواین ڈی ایس اور”را” کی حمایت حاصل تھی، اس حملے میں اسی مسلک کے لوگ ملوث تھے، ان کا مقصد ملک میں فرقہ واریت کو ہوا دینا تھا۔ ہم متحد رہے تو کوئی نقصان نہیں پہنچا سکتا۔یاد رہے کہ یہ وہی سانحہ تھا جس کو لے کر تکفیری ٹولہ مسلسل پروپیگنڈہ کرتا رہا کہ شیعوں نے ہماری مسجد پر حملہ کیا اور ہمارے بچوں کو قتل کیا ۔

اس رپورٹ سے اندازہ ہوتا ہے کہ تکفیری نے جو پروپگینڈا کیا ہے وہ بری طرح ناکام ہو چکا ہے اور اہل تشیع کے خلاف سازش ناکام ہو چکی ہے۔




Share
* نام:
* ایمیل:
* رائے کا متن :
* سیکورٹی کوڈ:
  

آخری مندرجات
زیادہ زیر بحث والی
زیادہ مشاہدات والی