2017 November 20
ایران میں اہلسنت کے دینی طلباء کی تعداد 30 ہزار سے زائد/ سب کو برابری کے حقوق حاصل ہیں
مندرجات: ٩٦٠ تاریخ اشاعت: ٢٤ August ٢٠١٧ - ١٠:٤١ مشاہدات: 51
خبریں » پبلک
ایران میں اہلسنت کے دینی طلباء کی تعداد 30 ہزار سے زائد/ سب کو برابری کے حقوق حاصل ہیں

کیا آپ جانتے ہیں کہ ایران میں اہلسنت کے دینی طلباء کی تعداد 30 ہزار سے زائد ہے اور انہیں شیعہ طلباء کی طرح حکومتی امکانات بشمول ماہانہ وظیفہ، میرج لون، دیگر مختلف بینک لونز، حج کوٹہ اور دیگر نقدی امداد (شادی شدہ طلباء کیلئے) فراہم کئے جاتے ہیں۔ واضح رہے کہ فارغ التحصیل طلباء کو معتبر حکومتی اسناد سے بھی نوازا جاتا ہے۔

خبر رساں ادارے تسنیم کے مطابق آل سعود کا دعویٰ ہے کہ ایران میں اہل سنت پر ظلم ہو رہا ہے اور وہاں اہل سنت حضرات کے لئے حتیٰ مساجد تک موجود نہیں ہیں تاہم دلائل ثابت کرتے ہیں کہ ایران میں شیعہ اور سنی حضرات بھائیوں کی طرح مل کر رہتے ہیں۔

ایران میں اہل سنت کے مقام کے نام سے تسنیم نیوز ایجنسی نے ایک سلسلہ وار خبر شائع کرنا شروع کی ہے جس میں ابهی تک اہل سنت مکتبہ فکر کے مختلف علماء کے نظریات شائع ہوئے ہیں۔

اس کے ساتھ ساتھ تسنیم ایسے موضوعات کی اشاعت میں مصروف ہے جن سے دنیا کو معلوم ہوگا کہ ایران میں شیعہ اور سنی حضرات بھائیوں کی طرح مل کر رہتے ہیں۔

اس طرح سے تسنیم، آل سعود کا شیعہ سنی تفرقے کے حوالے سے بےبنیاد پروپیگنڈا ناکام کرنے کیلئے پرعزم ہے کہ ایران میں اہل سنت پر ظلم ہو رہا ہے اور ایران میں ان کے کچھ حقوق نہیں ہیں۔

شاید آپ جانتے ہوں گے کہ اسلامی جمہوری ایران میں اہلسنت کے دینی طلباء کی تعداد 30 ہزار سے زائد ہے اور انہیں شیعہ طلباء کی طرح حکومتی امکانات بشمول ماہانہ وظیفہ، میرج لون، دیگر مختلف بینک لونز، حج کوٹہ اور دیگر نقدی امداد (شادی شدہ طلباء کیلئے) فراہم کئے جاتے ہیں۔ واضح رہے کہ ان طلباء کو فارغ التحصیل ہونے کے بعد حکومت کی جانب سے معتبر اسناد سے بھی نوازا جاتا ہے۔

ایران میں اہل سنت کے حوالے سے دلچسپ حقائق-1 کو ملاحظہ کرنے کیلئے یہاں، ایران میں اہل سنت کے حوالے سے دلچسپ حقائق-2 کیلئے یہاں اور ایران میں اہل سنت کے حوالے سے دلچسپ حقائق-3 کیلئے یہاں، ایران میں اہل سنت کے حوالے سے دلچسپ حقائق-4 کیلئے یہاں، ایران میں اہل سنت کے حوالے سے دلچسپ حقائق-5 کیلئے یہاں اور ایران میں اہل سنت کے حوالے سے دلچسپ حقائق-6 کیلئے یہاں کلک کریں۔





Share
* نام:
* ایمیل:
* رائے کا متن :
* سیکورٹی کوڈ:
  

آخری مندرجات
زیادہ زیر بحث والی
زیادہ مشاہدات والی