2017 September 23
کوئٹہ : چوبیس گھنٹوں میں تین شیعہ مومنوں کی شہادت پرحکومت بلوچستان خاموش تماشائی
مندرجات: ٩٣٥ تاریخ اشاعت: ١٥ August ٢٠١٧ - ٠٩:٣٨ مشاہدات: 25
خبریں » پبلک
کوئٹہ : چوبیس گھنٹوں میں تین شیعہ مومنوں کی شہادت پرحکومت بلوچستان خاموش تماشائی

کوئٹہ میں ایک ہفتہ کے دوران چار شہید بے دردی سے شہید کردیئے گئے لیکن حکومت بلوچستان کی جانب سے کسی بھی قسم کا کو ئی ری ایکشن سامنے نہیں آیا ہے،کوئٹہ بروز ہفتہ ۷ نومبر کو دہشتگردوں نے فائرنگ کے دو مومن عز ت اللہ اور محمد حسن کو شہید کیا، جبکہ ایک روز قبل یعنی ۶ نومبر کو کوئٹہ کی ارباب کرم روڈ پر انہیں دہشتگردوں نے ایک کار پر فائرنگ کی جس میں دو سگے بھائی جعفر عباس اور تنویر عباس موجود تھے، فائرنگ کے نتیجے میں جعفر عباس شہید ہوئے جبکہ تنویر عباس شدید زخمی حالت میں اسپتال میں ایڈمٹ ہیں،اسی طرح حاجی صادق جو پیشہ سے کارپینٹر تھے انہیں انکی دوکان پر دہشتگردوں نے فانرنگ کرکے شہید کردیا تھا۔

شیعت نیوز کے نمائندے کے مطابق 24 گھنٹوں میں بلوچستان کے کیپٹل سٹی میں تین شیعہ مومنین کو کالعدم جماعت کے دہشتگردوں نے قتل کیا لیکن حکومت اور قانوں نافذ کرنے والے اداروں کی جانب سے کسی بھی قسم کی دہشتگردوں کے خلاف کاروائی عمل میں نہیں آئی۔

دوسری جانب وزیر اعلی بلوچستان عبد المالک بلوچ نے گذشتہ روز بیان دیا تھا کہ ۵۰ فیصد دہشتگردی کے واقعات پر قابو پا لیا گیا لیکن ایک ہفتہ میں چار شیعہ مسلمانوں کی شہادت اور ضلع بولان کے علاقہ چھلگری میں واقع امامبارگاہ میں بم دھماکے  نے انکے تمام دعویٰ پر پانی پھیردیا ہے۔

دہشتگرد شہر میں دندناتے پھر رہے ہیں لیکن قانون نافذ کرنے والے ادارے اور حکومت حرکت میں نہیں آرہے،جبکہ دہشتگرد نامعلوم افراد بھی نہیں ہیں اور انکے چہرے پہلے سے بے نقاب ہیں۔

ذرائع کے مطابق دہشتگردوں کے چہرے کسی سے ڈھکے چھے بھی نہیں ہیں، شہر کوئٹہ میں کالعدم اہلسنت و الجماعت المروف (سپاہ صحابہ) کا سربراہ مولوی مینگل جسکے لشکر جھنگوی سے بھی قریبی تعلقات ہیں جو کئی بار شیعہ مسلمانوں کو قتل کرنے کا اعلانیہ اعتراف کرچکا ہے اور اسکے ویڈیو ثبوت بھی منظر عام پر لائے جاچکے ہیں لیکن حکومت بلوچستان اور قانون نافذ کرنے والے اداروں  کی جانب سے اسکے خلاف کوئی کاروائی عمل میں نا لانا انکے دہشتگردوں سے کٹھ جوڑ کا عملی ثبوت ہے ۔





Share
* نام:
* ایمیل:
* رائے کا متن :
* سیکورٹی کوڈ:
  

آخری مندرجات
زیادہ زیر بحث والی
زیادہ مشاہدات والی