2018 April 21
مکہ مکرمہ کو عرب صہیونیوں کےقبضے سےآزاد کروانا چاہیے
مندرجات: ١٤٥٨ تاریخ اشاعت: ١٠ April ٢٠١٨ - ١٤:٠٩ مشاہدات: 25
خبریں » پبلک
مکہ مکرمہ کو عرب صہیونیوں کےقبضے سےآزاد کروانا چاہیے

تیونس کے ایک مشہور مبلغ بشیربن حسن نے فیس بک پرلکھا ہےکہ جو شخص ابھی تک اس مطلب کی متوجہ نہیں ہوا ہے کہ ہمارے دونوں قبلوں پرقبضہ ہے وہ شرعی اورعملی لحاظ سےجاہل ہے۔ قبلہ اول اسرائیل کے قبضے میں قبلہ دوم عرب صہیونیوں کے قبضے میں ہے لہذا انہوں نے مسلمانوں کے ان دونوں قبلوں کو آزاد کروانا واجب قراردیا ہے۔

انہوں نےمحمد بن سلمان کے بارے میں ولیعہد کا  لفظ استعمال کرنےکی بجائے( عہدوپیمان توڑنے والا) کا لفظ استعمال کرتے ہوئے اس کے امریکہ کے سفرکے بارے میں لکھا ہے کہ خادم حرمین شریفین کا بیٹا اورعہد توڑنے والا محمد بن سلمان بہت جلد اپنے امریکی آقاوں کے سامنے سرتسلیم خم ہوگیا ہے تاکہ ان کی رضایت کو حاصل کرکے اپنی بادشاہت کو مستحکم کرسکے۔

بن حسن نے مزید لکھا ہےکہ محمد بن سلمان نے چند دن پہلے یورپ کو اخوانی براعظم میں تبدیل کرنے کے لیے اخوان المسلمین کی کوششوں پرخبردارکیا ہے جبکہ اخوان المسلمین پردہشتگرد ہونے کا الزام لگانے اوریورپ کو اس سے ڈرانے پرمبنی سعودی عہدشکن کا اقدام ایک قسم کی سیاسی حماقت ہے کیونکہ سعودی عرب اوراس کے علماء کے فتووں کی وجہ سے دہشتگردی پیدا ہوئی ہے ۔ ۔ ۔ اخوان المسلمین سے اس کی مشکل یہ ہے کہ اخوانی جماعت والے ووٹوں کے ذریعے اقتدارکی منتقلی اوراپنےحکمرانوں کے انتخاب میں لوگوں کے ووٹوں کو اہمیت دیتے ہیں جبکہ یہ نظریہ سعودی عرب کی غاصب حکومت کے لیے قابل قبول نہیں ہے۔ سعود ی عرب میں لوگ اپنی مرضی سے بیعت نہیں کرتے ہیں بلکہ ان سے زبردستی بیعت لی جاتی ہے۔

انہوں نے آخرمیں کہا ہےکہ القاعدہ اورداعش کے سربراہ کا تعلق سعودی عرب ہے اورنیویارک میں حملہ کرنے والے پندرہ افراد کا تعلق بھی سعودی عرب سے تھا اوراس کے علاوہ مسلح گروہوں کو سعودی حمایت بھی حاصل ہوتی ہے کہ جس کا انکارنہیں کیا جاسکتا ہے۔

بن حسن نے اس سے قبل بھی حج کرنے کے لیےمکہ جانے سےاجتناب کرنےکا مطالبہ کرتے ہوئے یہ دلیل پیش کی تھی کہ اس کے سارے پیسے امریکہ کی جیب میں جاتے ہیں ۔ انہوں نے سعودی ولیعہد پرفلسطین کے اہداف سےخیانت کا الزام لگایا ہے۔




Share
* نام:
* ایمیل:
* رائے کا متن :
* سیکورٹی کوڈ:
  

آخری مندرجات
زیادہ زیر بحث والی
زیادہ مشاہدات والی