2018 December 17
سعودی عرب کی امریکی صدر کے فیصلے کو ماننے کے لئے محمود عباس کو 100 ملین ڈالر کی رشوت کا پردہ فاش
مندرجات: ١١٨٥ تاریخ اشاعت: ١١ December ٢٠١٧ - ١٩:٠٦ مشاہدات: 116
خبریں » پبلک
سعودی عرب کی امریکی صدر کے فیصلے کو ماننے کے لئے محمود عباس کو 100 ملین ڈالر کی رشوت کا پردہ فاش


رائٹرز نے دعوی کیا ہے کہ سعودی عرب نے بیت المقدس کو اسرائيل کا دارالحکومت قراردینے کے امریکی فیصلے کو ماننے کے لئے فلسطین کے صدر محمود عباس کو 100 ملین ڈالر رشوت ادا کردیئے ہیں۔

 اہل بیت(ع) نیوز ایجنسی ۔ ابنا ۔ کی رپورٹ کے مطابق رائٹرز نے دعوی کیا ہے کہ سعودی عرب نے بیت المقدس کو اسرائيل کا دارالحکومت قراردینے کے امریکی فیصلے کو ماننے کے لئے فلسطین کے صدر محمود عباس کو 100 ملین ڈالرکی رشوت ادا کردی ہے۔ ادھر محمود عباس کا کہنا ہے کہ یہ امداد فلسطینی بجٹ اور اسرائیلی پابندیوں کا مقابلہ کرنے کے لئے ادا کی گئی ہے۔ رائٹرز کے مطابق سعودی عرب ایک طرف بظاہر امریکہ کے اقدام کی مذمت کررہا ہے اور دوسری طرف امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے فیصلے کو عملی جامہ پہنانے کے لئے تلاش و کوشش کررہا ہے۔ عرب اور اسرائیلی ذرائع کے مطابق امریکی صدر نے بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت قراردینے سے پہلے سعودی عرب، مصر اور امارات کے رہنماؤں سے مشورہ کیا تھا اور سعودی عرب کے بادشاہ شاہ سلمان اور ولیعہد محمد بن سلمان دونوں کو اس بات کا علم تھا کہ امریکی صدر ٹرمپ بیت المقدس کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کریں گے۔




Share
* نام:
* ایمیل:
* رائے کا متن :
* سیکورٹی کوڈ:
  

آخری مندرجات
زیادہ زیر بحث والی
زیادہ مشاہدات والی