2017 December 11
میدانوں سے ایوانوں تک سازشوں کا مقابلہ کیا، علامہ ساجد نقوی
مندرجات: ١١٤٨ تاریخ اشاعت: ٢٥ November ٢٠١٧ - ١١:٢٦ مشاہدات: 12
خبریں » پبلک
میدانوں سے ایوانوں تک سازشوں کا مقابلہ کیا، علامہ ساجد نقوی

 اسلامی تحریک کے سربراہ علامہ سید ساجد علی نقوی نے واضح کیا ہے کہ وہ کسی کو کبھی دھمکی نہیں دیتے کیونکہ دھمکی وہ دیتا ہے جو کمزور ہو،ہم کمزور نہیںہیں،ہم اس ملک کے طاقتور اور آزاد شہری ہیں۔ ہم ایک فکر اور نظریہ رکھتے ہیں ، نظریہ کبھی اوچھے ہتھکنڈوں سے روکا نہیں جا سکتا، ہمارے خلاف کروڑوں روپے خرچ کیے گئے لیکن ہم اس سے بھی زیادہ کامیاب ہوئے، کونسی سازش ہے جوہمارے خلاف نہیں کی گئی، ہم نے میدانوں سے لے کر ایوانوں تک ان سازشوں کا مقابلہ کیا۔ ملی پلیٹ فارم مضبوط ہے، عزاداری سیدالشہداءکا نظام توانا ہے، اس میں کوئی رخنہ اندازی نہیں کی جاسکتی۔ امام بارگاہ قصر زینب میں تحریک پاکستان کے گولڈ میڈلسٹ اور اسلامی تحریک کے مرکزی نائب صدر سید وزارت حسین نقوی ایڈووکیٹ او ر تحریک کے سابق مرکزی سیکریٹری جنر ل شہید انور علی آخونزادہ کی برسی کے موقع پر اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے علامہ ساجد نقوی نے تشویش کا اظہار کیا کہ تبلیغی مجالس عزا برپا کرنے والوں کے خلاف ایف آئی آرز درج کی جا رہی ہیں، تبلیغی مجالس عزاءسیدالشہداءکے انعقاد کے لیے کسی قربانی سے دریغ نہیں کیا جائےگا۔ سیکیورٹی کے نام پر غیر ضروری اقدامات جن سے کمی واقع ہوہم اس حق میں نہیںہیں ۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کا آئین ہمیں عزاداری سیدالشہداءمنانے کا حق دیتا ہے، مجالس عزاپر ایف آئی آرز کا اندراج عوام کے بنیادی حقوق سلب کرنے کے مترادف ہے، ہمارے خلاف ایف آئی آرز درج کرنا بندکی جائیں ۔عوام کے حقوق کا تحفظ کرنا ریاست کی ذمہ داری ہے، اگریہ سلسلہ جاری رہا تو خود ریاست سوالیہ نشان بن جائے گی ۔ہم پنجاب انتظامیہ کو متنبہ کرتے ہیں کہ تبلیغی مجالس عزا سید الشہداءکے انعقاد پر ایف آئی آرز کسی صورت برداشت نہیں کی جا سکتی۔ علامہ ساجد نقوی نے کہا کہ زیارات مقامات مقدسہ پر جانا عوام کا بنیادی حق ہے، ریاست کی ذمہ داری ہے کہ عوام کے حقوق پورے کرے۔ہم حکومت کو متوجہ کرتے ہیں کربلامیں امام حسین علیہ السلام کے چہلم سے واپسی پر تمام زائرین کو سفری سہولیات فراہم کی جائیں۔زائرین زیارات کے اس راستے کو کسی صورت ترک نہیں کریں گے۔ انہوں نے عوام کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ اپنی مجالس میں ایسی باتوں سے اجتناب کریں جس سے کسی کی دل آزاری ہو۔ہم پاکستان میں اتحادکے بانی ہیں، ہم نے اپنی حکمت اور دانائی سے تکفیرکے فتنے کو گندگی کے ڈھیرتک پہنچا دیا ہے، ہم آج 28 مذہبی جماعتوںکے اندر موجود ہیں، اس ملک میں امن و امان کو قائم کرنا ہماری ذمہ داری ہے۔انہوں نے کہا کہ ہم نے اس ملک میں اتحاد و وحدت کو فروغ دیا ہے، اگر اس ملک کے اندر دھرنے، ریلیاں، احتجاج ہوسکتے ہیں تو عزاداری اور مجالس پر رکاوٹیں قطعاً جائز نہیں ہیں ۔ان کا کہنا تھا کہ ہماری پوری تاریخ قربانیوں سے عبارت ہے اور ارض پاک کی داخلی سلامتی اور وحدت کی خاطر بھی خاص طور پر گذشتہ تین دہائیوں سے جانوں کے نذرانے پیش کئے گئے لہذا ان شہداءکے پیروکاروں کو چاہیے کہ وطن عزیز کی وحدت و استحکام کے لئے ملک میں محروم و مظلوم طبقات کو درپیش مسائل کے حلً فرقہ واریت کے خاتمے‘ طبقاتی تقسیم ‘بد عنوانی‘ بے راہ روی اورمعاشرتی مسائل کے حل کے لیے جدوجہد کریں۔




Share
* نام:
* ایمیل:
* رائے کا متن :
* سیکورٹی کوڈ:
  

آخری مندرجات
زیادہ زیر بحث والی
زیادہ مشاہدات والی